38

بلڈ پریشر کی ادویات استعمال کرنے والے مریض کینسر کا شکار ہونے لگے

ڈاکٹر اور مریض وال سارٹن کا استعمال فوری طور پر ترک کردیں، ڈرگ ریگولیرٹی اتھارٹی فوٹو:فائل

ڈاکٹر اور مریض وال سارٹن کا استعمال فوری طور پر ترک کردیں، ڈرگ ریگولیرٹی اتھارٹی فوٹو:فائل

 لاہور: ملک میں بلڈ پریشر کی ادویات استعمال کرنے والے مریضوں کے کینسر میں مبتلا ہونے کا ہولناک انکشاف ہوا ہے۔

ڈرگ ریگولیرٹی اتھارٹی نے 9 کمپنیوں کی بلڈپریشر کی ادویات کی فروخت پر فوری پابندی عائد کردی ہے۔  ترجمان ڈریپ کے مطابق وال سارٹن نامی گولی میں کینسر کو باعث بننے والے کیمیکلز موجود ہیں، ڈاکٹر اور مریض متعلقہ گولی کا استعمال فوری طور پر ترک کردیں۔ وال سارٹن نامی گولی ہائی بلڈ پریشر کے مریضوں کو ہارٹ اٹیک سے بچانے کے لئے استعمال کی جاتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: دل کے امراض کی دوا Valsartan واپس لینے کی ہدایت

پابندی کا شکار کمپنیوں میں افروز فارماسیوٹیکلز، ہائی کیو فارما، فارم ایوو، سمیع فارماسیوٹیکلز، ٹابروس فارما، سرل فارماسیوٹیکلز اور جینیٹکس فارماسیوٹیکلز شامل ہیں۔ ڈریپ نے امارانٹ اور سیف فارماسیوٹیکلز کو بھی ادویات مارکیٹ سے واپس منگوانے کی ہدایت کی ہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.